Nazdeek Jo Ahsas K Jazbon Se Howa Hun

Nazdeek Jo Ahsas K Jazbon Se Howa Hun
Warasta Me Alfaz K Rishton Se Howa Hun

Apney Me Magan Hey Sabi Ko Apna Hi Gham He
Bezar Me Apno Sey Parayun Sey Howa Hun

Firoun Ne Bi Orh Liya Jama E Mosa
Mohtat Me Ab Kuch Naey Rishton Se Howa Hun

Taqat K Tawasut Se Jo Manwaey Khudai
Baghi Me Aesey Jhotey Khudaon Se Huwa Hun

Noman Jo Is Mulk Ne Phelati hey Nafrat
Ab Robaro Kuch Aesey Hawaon Se Howa Hun

نزدیک جو احساس کے جذبوں سے ہوا ہوں
وارستہ میں الفاظ کے رشتوں سے ہوا ہوں

اپنے میں مگن ہیں، سبھی کو اپنا ہی غم ہے
بے زار میں اپنوں سے، پرایوں سے ہوا ہوں

فرعون نے بھی اوڑھ لیا جامہ موسى
محتاط میں کچھ اب نئے رشتوں سے ہوا ہوں

طاقت کے توسط سے جو منوائیں خدائی
باغی میں ایسے جھوٹے خداوں سے ہوا ہوں

نعمان جو اس ملک میں پھیلاتی ہے نفرت
اب روبرو کچھ ایسے ہواؤں سے ہوا ہوں

Leave a Reply